اپ ڈیٹ: 12 December 2018 - 17:01
شام میں امریکی فوجیوں کی موجودگی کے بارے میں امریکی حکام کے متضاد بیانات کے دوران وائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ ٹرمپ جلد سے جلد شام سے امریکی فوجیوں کی واپسی کے خواہاں ہیں۔
خبر کا کوڈ: ۱۲۱۵
تاریخ اشاعت: 19:57 - April 16, 2018

شام سے فوجی انخلا کے بارے میں امریکہ کی تضاد بیانیمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، وائٹ ہاؤس کی ترجمان سارہ سینڈرز نے ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ وائٹ ہاؤس کے مشن میں تبدیلی نہیں آئی ہے اور امریکی صدر ٹرمپ نے واضح طور پر کہا ہے کہ وہ شام سے امریکی فوجیوں کو جلد سے جلد واپس بلانا چاہتے ہیں  اس درمیان اقوام متحدہ میں مستقل امریکی مندوب نکی ہیلی نے  کہا ہے کہ شام میں جب تک امریکی مقاصد پورے نہیں ہو جاتے شام میں امریکی فوجی باقی رہیں گے۔

فرانسیسی صدر امانوئل میکروں نے بھی کہا ہے کہ پیرس نے شام میں طویل مدت فوجی موجودگی کے سلسلے میں واشنگٹن کو رضامند کر لیا ہے۔شام سے امریکی فوج کے انخلا کے بارے میں یہ متضاد بیانات ایسی حالت میں سامنے آرہے ہیں کہ امریکا، برطانیہ اور فرانس نے شام کے شہر دوما میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کا بہانہ بنا کر شام پر میزائل حملہ کیا ہے۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں