اپ ڈیٹ: 11 May 2019 - 20:54
صدر مملکت عارف علوی کی رہائشگاہ کے باہر ہونیوالے احتجاجی دھرنے میں فردوس شمیم نقوی کی تقریر کے دوران جبری گم کردہ افراد کے ورثاء نے مطالبہ کیا کہ انکے جائز مطالبے پر فوری ایکشن لے کر جبری گم کردہ بے قصور شیعہ شہریوں کو فوری رہا کیا جائے۔
خبر کا کوڈ: ۳۸۸۰
تاریخ اشاعت: 17:03 - April 29, 2019

کراچی میں شیعہ لاپتہ افراد کے اہلخانہ کا دھرنا، بے قصور شہریوں کو فوری رہا کرنے کا مطالبہمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی کی شیعہ لاپتہ افراد کے اہلخانہ کے دھرنے میں آمد۔ حکمراں جماعت پی ٹی آئی کے رہنما فردوس شمیم نقوی نے کراچی کے احتجاجی دھرنے میں مظاہرین کے مطالبات سنے، ایوان میں آواز اٹھانے کی یقین دہانی کرائی۔

تفصیلات کے مطابق حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما فردوس شمیم نقوی نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی کراچی رہائشگاہ کے باہر احتجاجی دھرنا کے منتظمین سے ملاقات کرکے یقین دلایا کہ وہ جبری گمشدہ شیعہ افراد کے ورثاء کی آواز ایوانوں تک پہنچائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وہ شیعہ مسنگ پرسنز کے متاثرہ خانوادوں کا پیغام آگے پہنچائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ ظالم کا تعلق کسی سے بھی ہو،  اس کو پکڑنا چاہئیے، جس نے ظلم کیا اس کو جواب دینا ہوگا۔ انکی تقریر کے دوران جبری گم کردہ افراد کے ورثاء نے مطالبہ کیا کہ انکے جائز مطالبے پر فوری ایکشن لے کر جبری گم کردہ بے قصور شیعہ شہریوں کو فوری رہا کیا جائے، ان سے سوال کیا گیا کہ صدر مملکت کب آئیں گے۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں