اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر کے علاقوں کولگام اور شوپیان میں تشدد بھڑک اٹھا اور 32سے زائد افراد زخمی ہوئے جن میں 6کی آنکھوں میں پیلٹ لگے جنہیں سرینگر منتقل کردیا گیا۔
خبر کا کوڈ: ۱۹۵۸
تاریخ اشاعت: 18:01 - July 24, 2018

کشمیر میں جھڑپیں32 سے زائد افراد زخمیمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، کولگام اور شوپیان میں ہلاکتوں پر احتجاج کیا گیا اورہڑتال کی گئی جبکہ ممکنہ احتجاجی مظاہروں کے خدشات اور امن وامان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لئے ضلع میں مسلسل دوسرے روز بھی موبائیل انٹر نیٹ خد مات منقطع رہیں ۔

اتوار کو وانی محلہ کھڈونی میں جھڑپ کے دوران تین عسکریت پسندوں کی ہلاکت کے بعد فورسز نے پیر کو اسی بستی سے بالکل ملحقہ لون محلہ میں کریک ڈاون کیا۔جس پر علاقے کے عوام نے زبردست احتجاج کیا اور سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے کئے اور فورسز پر پتھراو کیا۔فورسز نے مشتعل مظاہرین کو تتربتر کرنے کیلئے ٹیر گیس شیلنگ کی  اور پیلٹ کا استعمال کیا،جس کے نتیجے میں32سے زائد افراد  زخمی ہوئے جن میں 6کی آنکھوں میں پیلٹ لگے جنہیں سرینگر منتقل کردیا گیا۔

ادھر 3عسکریت پسندوں کی یاد میں پیر کے روز کولگام ضلع کے بیشتر علاقوں میں تعزیتی ہڑتال رہی ۔ ہڑتال کے دوران دکانیں اور دیگر کاروباری مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں سے پبلک ٹرانسپورٹ غائب رہا ہڑتال کے باعث کسی بھی گڑھ بڑھ کو روکنے کیلئے اضافی اہلکاروں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں