اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
ایران کے صدر نے جمعرات کے روز تہران میں دورہ روس پر روانہ ہونے سے پہلے صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے دورہ روس میں روسی اور ترک ہم منصبوں کے ساتھ گفتگو کریں گے.
خبر کا کوڈ: ۳۶۵۱
تاریخ اشاعت: 12:59 - February 14, 2019

دہشتگردی کی اصل جڑ امریکہ اورغاصب صہیونی حکومت : ایرانمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے ملک کے جنوب مشرقی علاقے میں دہشت گردوں کی حالیہ کارروائی کو دشمنوں کی بے بسی قرار دیتے ہوئے کہا کہ خطے میں دہشت گردی کی اصل جڑ امریکہ اورغاصب صہیونی حکومت ہے ۔

صدر مملکت حسن روحانی نے  سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے جاں نثاروں پر دہشت گردوں کے سفاکانہ حملے کو دشمنوں کی بے بسی کی انتہا قرار دیتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے بعض ممالک بھی خطے میں امریکہ اورغاصب صہیونی حکومت کی دہشتگردی کی حمایت کر رہے ہیں ۔

صدر مملکت نے سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کی بس پر ہونے والے خود کش حملے کے شہداء کے اہل خانہ بالخصوص رہبر انقلاب اسلامی اور مسلح افواج سے تعزیت کا اظہار کیا.انہوں نے مزید کہا کہ دشمنوں کی جانب سے ایرانی قوم کے خلاف ایسی شیطانی سازشیں نہ صرف ناکام ہوں گی بلکہ ہمارا عزم مزید مضبوط ہوتا جائے گا ۔

ڈاکٹرحسن روحانی نے بعض ہمسایہ ممالک سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی ذمہ داری پوری کریں اور دہشتگردوں کو اپنی سرزمین دوسرے پڑوسیوں کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہ دیں ۔

ایران کے صدر نے اپنے دورہ روس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ روسی اور ترک صدور کے ساتھ چوتھی نشست میں شرکت کے لئے سوچی جارہے ہیں جہاں وہ آستانہ امن عمل کے تحت شام میں قیام امن اور مذاکرات سے متعلق بات چیت کریں گے ۔

واضح رہے کہ کل شام زاہدان، خاش  سپر ہائی وے  پر سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کی ایک بس پر جیش ظلم کے تکفیری دہشتگردوں نے خودکش حملہ کیا جس کے نتیجے میں 27 اہلکار شہید اور 13 زخمی ہوئے ۔

پیغام کا اختتام/

 
 
آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے: