اپ ڈیٹ: 21 April 2021 - 14:43
امریکہ میں ڈیموکریٹ نمائندوں نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث سعودی عرب کے ولیعہد بن سلمان کے خلاف تادیبی کارروائی کرنے کیلئے 2 فارمولا پیش کیا ہے۔
خبر کا کوڈ: ۴۳۲۹
تاریخ اشاعت: 16:22 - March 03, 2021

بن سلمان کے گرد گھیرا تنگمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق پہلا فارمولا امریکی ایوان نمائندگان کی مسلم رکن ایلہان عمر نے پیش کی جس میں سعودی عرب کے ولیعہد بن سلمان کے اثاثوں کومنجمد کرنا اور امریکہ میں ان کے داخلے پر پابندی عائد کرنا ہے۔

دوسرا فارمولا ایک ڈیموکریٹ رکن پارلیمنٹ اور خارجہ پالیسی کی کمیٹی کے رکن ٹام مالینوفسکی" Tom Malinowskiنے پیش کیا جس میں امریکہ میں بن سلمان کے داخلے پر پابندی عائد کرنے کے ساتھ ساتھ سعودی عرب پر ہتھیارفروخت کرنے پر پابندی عائد کئے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ کے قومی انٹیلی جینس ڈائریکٹوریٹ کی جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ  سعودی  حکومت کے مخالف صحافی جمال خاشقجی کو گرفتار یا قتل کرنے کا حکم خود سعودی ولی عہد بن سلمان نے دیا تھا۔ سعودی وزارت خارجہ نے اس اقدام پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں دعوی کیا گیا ہے کہ امریکی انٹیلی جینس ڈائریکٹوریٹ کی رپورٹ کے نتائج توہین آمیز اور من گھڑت ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی ولی عہد پر کڑی نکتہ چینی کرنے والے صحافی جمال خاشقجی کو اکتوبر دوہزار اٹھارہ میں ترکی کے شہر استنبول میں قائم سعودی قونصل خانے میں انتہائی بے دردی کے ساتھ قتل کردیا گیا تھا۔اس سے پہلے سی آئی اے کی ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ جمال خاشقجی کے قتل کا حکم  براہ راست سعودی ولی عہد بن سلمان نے دیا تھا تاہم اس نے اس بارے میں ثبوت اور شواہد پیش نہیں کیے تھے۔

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں